کامیابی یونہی نہیں ملتی, زورِ بازو آزمانا پڑتا ہے

by Maryam
کامیابی یونہی نہیں ملتی، زورِ بازو آزمانا پڑتا ہے

زندگی آساں نہیں ہوتی

اسے آساں بنانا پڑتا ہے

کامیابی یونہی نہیں ملتی

زورِ بازو آزمانا پڑتا ہے

کبھی گھبرانے لگو تم محنت کرتے

پیچھے مڑ کر ضرور دیکھنا

کہاں سے آغازِ سفر کیا تھا

یہ بھی ایک بار سوچنا

کیوں چلے تھے گروہ سے جدا ہو کر

کیوں بنائی تھی الگ ڈگر سوچنا

اب جو چل پڑے ہو تو تھکن کیسی

منزل کے نشاں سوچنا

کبھی جو ٹوٹ کر بکھرنے لگو

خود کو سمیٹنا اور چل پڑنا

مانا یہ سفر دشوار ہے

مگر زندگی سے پھر بھی پیار ہے

زندگی کی تلخیوں کو

تہہ در تہہ لپیٹنا

قدم لڑکھڑا جائیں یا

آنسومنظر دھندلانے لگیں

تو خدا کے سامنے گڑگڑانا

مقدار اپنی محنت کی بڑھانا

لیکن ہمت کبھی نہ ہارنا

راستے تلاشتے جانا

کہ جو ہمت کرتے ہیں

منزل کو پا لیتے ہیں

طوفانوں سے ٹکرانے والے

تمغے جیت ہی لیتے ہیں

کامیابی یونہی نہیں ملتی، زورِ بازو آزمانا پ

zindagi asaa’n nahi hoti

isy asaa’n bnana prta hai

kamyabi yuhi nhi milti

zor e bazu azmana prta hai

kabhi gabhrany lago tum mahnat krty

peechy murr kr zarur dekhna

kahan se aghaz e safar kiya tha

yeah bhi aik bar sochna

kiyun chaly thy groh se juda ho kar

kiyun bnai thi alag dagar sochna

ab jo chal prry ho to thakan kesi

manzil kay nishaan sochna

kabhi jo toot kar bikharny lago

khud ko smetna or chal prrna

maana yeah safar dushwaar hai

magar zindagi se phir bhi payar hai

zindagi ki talkhiyo ko

tah dar tah lapetna

qadam lrkhrra jayen yaa

ansu manzar dhundlany lage’n

to khuda k samny girgrana

miqdaar apni mahnat ki barhana

lekin himat kabhi na haarna

raasty tlashty jaana

k jo himat karty hain

manzil ko paa lety hen

toofano se takrany waly

tamghy jeet hi lety hen

Related Posts

3 comments

Muhammad Awais April 10, 2021 - 2:24 am

جی سچ کہا محنت کامیابی کی کنجی ہے

Tabassum Javed May 9, 2021 - 2:58 pm

Good keep it up

Maryam May 16, 2021 - 10:36 am

Thanks

Comments are closed.